Category Archives: Islam

Surjit Singh Lamba

These are three articles on Surjit Singh Lamba‘s conributions on Islaamiyaat and Iqbaaliyaat by eminent scholars.
Feroz-1 Feroz-2 Suheyl-1 Suheyl-2 Tayeba

Photo of the Day: City Surrounded by Sacrificial Animals as Eid-ul-Azha comes near

The city is not just surrounded by, but also filled with sacrificial animals. It has traders roaming free all over the city to sell their animals.

sacrifical

Photo via The News

بھیرو کا استھان، ہندوؤں کی قدیم تاریخی عبادت گاہ جو رہائش گاہ بن گئی

This article was originally posted in The Daily Express

مندر کی عمارت میں رہائشی لوگ بہت ساری طلسماتی اور ماورائی کہانیوں کے اسیر ہیں۔ فوٹو: فائل

قدیم لاہور کے مقام کے بارے میں مؤرخین کی ایک رائے یہ بھی ہے کہ اس وقت کے پرانے لاہور سے کچھ فاصلے پر واقع اچھرے کو قدیم لاہور کہا جا سکتا ہے۔ہندوستان میں کئی قدیم شہروں کے گرد فصیلوں میں موجود دروازوں کے نام نسبتی ہونے کے ساتھ ساتھ دوسرے شہروں کے رخ کی جانب ہونے کے باعث ان شہروں کے ناموں پر بھی دکھائی دیتے ہیں۔ جس طرح پرانے لاہور میں دہلی اور کشمیری دروازوں کے رخ ان شہروں اور مقامات کی جانب ہیں۔ اسی طرح اگر لاہوری دروازے کی سیدھ میں دیکھا جائے تو اچھرہ کا علاقہ دکھائی دیتا ہے۔

یہ قرین قیاس ہے کہ قدیم لاہور کا مقام اچھرہ ہی ہو۔ اچھرہ میں ہمیں دو قدیم مندروں کے حوالہ جات بھی تاریخ کی کتب میں ملتے ہیں۔ ایک مندر ’’چاند رات مندر‘‘ تھا جس کا رقبہ کئی کنال پر محیط تھا۔ لیکن اب اس مندر کے آثار ڈھونڈنے سے مل نہ پائیں گے۔ دوسرا مندر ’’بھیرو کا استھان‘‘ تھا۔ تاریخ کی کچھ کتب میں اسے ’’بھیرو استھان‘‘ بھی کہا گیا ہے۔

’’استھان‘‘ ہندی زبان کا لفظ ہے جس کے معنی مقام‘ جگہ‘ حالت‘ رہائش گاہ‘ مندر‘ مزار کے ہیں۔ ’’تھان‘‘ بھی ہندی زبان کا لفظ ہے جس کے معنی مقام اور جگہ کے ہیں۔ چونکہ یہ مندر بھیرو سے منسوب ہے تو یہ مندر بھیرو کا مندر‘ یا بھیرو کی رہائش گاہ کے معنی میں لیا جاسکتا ہے ۔ اب ایک نگاہ بھیرو پر بھی ڈال لی جائے۔

ہندو اساطیر کی روشنی میں بھیرو نامی ایک دیوی کا تذکرہ ملتا ہے جو ہندوئوں کے لیے اپنے تقدس کے باعث مشہور ہے۔ اس کے بھگت کامیابی کے لئے اس کی پوجا کرتے ہیں۔ سید لطیف نے اپنی کتاب ’’تاریخ لاہور‘‘ میں اس مندر کے حوالے سے دیوی ہی کا ذکر کیا ہے۔

دیوی کے ساتھ ساتھ بھیرو نامی دیوتا بھی دیو مالائی کہانیوں کا ایک مشہور اور خاص کردار ہے۔ ہندوستان میں کئی مقامات پر اسی دیوتا کے نام سے بڑے بڑے مندر اور پوجا گھر دکھائی دیتے ہیں۔ ہندو روایات میں یہ دیوتا اپنے غیض و غضب کے حوالے سے مشہور ہے۔ اس کے بھگت عموماً اس کی پوجا اپنے دشمنوں پر کامیابی حاصل کرنے کی غرض سے کرتے ہیں۔ لاہور کی تاریخ کے حوالے سے کئی کتب میں یہ مندر اسی دیوتا سے منسوب ہے۔ یہ دیوتا شیوا جی اور دیوی ستی کا اوتار ہے۔

دیوی ستی کا باپ دکھشا نامی دیوتا تھا۔ دکھشا نے ایک بار بہت عظیم الشان یوجنا کا اہتمام کیا جس میں تمام دیوتاؤں کو مدعو کیا گیا لیکن شیوا کو نہ بلایا گیا۔ ستی دیوی کو اپنے شوہر کی بے عزتی کا گہرا رنج ہوا اور وہ اسی یوجنا کی آگ میں جل کر مر گئی۔ شیوا نے ستی دیوی کی موت کے باعث اس کے باپ دکھشا کو مار ڈالا اور یوجنا کی آگ سے اس کا جسم اٹھا لیا تاکہ وہ تاندوا کی رسم پوری کر سکے۔ اس کتھا کے آخر میں دھرتی کا پالن کرنے کے لئے وشنو دیوتا نے ستی کے جسم کے ٹکڑے پرتھوی (زمین) پر گرا دیئے جو کہ ہندوستان کے مختلف علاقوں میں گرے۔

جہاں جہاں وہ ٹکڑے گرے وہیں وہیں پر بھگتی کے مندر تعمیر ہوتے گئے۔ شیوا ان مندروں کی حفاظت کے لئے بھیرو کی شکل میں آتا ہے اور بھیرو کوتوال کے نام سے جانا جاتا ہے۔ کوتوال کے علاوہ بھیرو راہو اور یوگیوں کے دیوتا کے نام سے بھی جانا جاتا ہے۔ یوگی اور تانترک بھگت شدھی حاصل کرنے کے لئے خاص منتروں کی پڑھائی کے ساتھ ساتھ کئی طرح کی جسمانی مشقتیں بھی کرتے ہیں۔ یوگا اور تانترک یہ مشقیں نروان حاصل کرنے کے لئے کی جاتی ہیں۔ ان مشقوں کا ذکر بارہا گرو رجنیش المعروف اوشو نے بھی کیا ہے۔

Continue reading

Cleric’s killing turns Pakistan public against the Taliban

Pamela Constable, The Washington Post

LAHORE, Pakistan – The modest office where Sarfraz Naeemi kept his library and received visitors seeking spiritual guidance is now a charred hole. The floor is strewn with burned pages, glass shards and ball bearings from a young suicide bomber’s lethal vest. Continue reading

Urs of Mian Mir from 5th

Miniature depicting Hazrat Mian Mir and his disciple, Mullah Shah, in conversation with Prince Dara Shikoh.

Miniature depicting Hazrat Mian Mir and his disciple, Mullah Shah, in conversation with Prince Dara Shikoh.

LAHORE (APP) – The 385th annual urs of Hazrat Mian Mir will begin on March 5 (Thursday). Secretary Auqaf Punjab Khizar Hayat Gondal will inaugurate the two-day urs celebrations by performing traditional chadar laying ceremony on the grave of sufi saint.
Punjab Auqaf Department has granted Rs 200,000 for holding urs celebrations and facilitating the visitors coming from all over the country, a spokesman of Auqaf Department told APP on Sunday.
Ulema and Mashaikh will highlight the teachings of Hazrat Mian Mir during urs days. Mehfil-e-Sama will also be held in which renowned qawwals will present religious poetry on the occasion.

Mosquarade!

On Cavalry Road, Mughalpura

On Cavalry Road, Mughalpura

by Ahmad Rafay Alam

We all know mosques are places of worship. But occasionally stepping outside the confines of this limited relationship can be rewarding. Few see mosques as anything other than places of worship. But, as a type of structure, I wager there are more mosques in Pakistan than any other type of structure. Continue reading

Martin Lings Memorial Lecture & Environment Symposium

Alam-al-Khayal and WWF-Pakistan invite you to

Quranic Clarifications on the Environment Crisis

18-20 December 2008, Ali Auditorium, Ferozepur Road

“It is the nature of God to wish to communicate itself”- Alam-al-Khayal aspires to participate in this self-revelation of the Sovereign Good, doing so with a particular emphasis on reviving traditional knowledge and disciplines through lectures, symposie, film documentaries and workshops on sacred scholarship.

You are invited to attend

  • The Martin Lings Memorial Lecture, “Art and the Real” by Kamil Khan Mumtaz Sahib at 7pm on 18 December at the Ali Auditorium;
  • “A Quranic Response to “An Inconvenient Truth” by Dr. Reza Shah-Kazemi at 7pm on 19 December at the Ali Auditorium; and
  • “Sacred Signs & Environmental Solutions” – An Environment Symposium (in Urdu) at 10.30am on 20 December at the Ali Auditorium.

Speakers at the Symposium will include

  • Mr. Iqbal Ahmed Qarshi, Qarshi Foundation
  • Mr. Ali H. Habib, WWF-Pakistan
  • Ms. Nudrat B. Majeed, Alam-al-Khayal
  • Mr. Masood Arshad & Ms. Marriyum Aurangzeb
  • Mr. Suheyl Umar
  • Mr. Ahmad Rafay Alam, Advocate (and Lahore Nama contributer!)